کم بجلی استعمال کرنے والے سرکٹ

سرکٹ کسی بھی ڈیجیٹل آلے کا بنیادی جز ھوتا ھے ۔ تیز رفتاری سے ترقی کرتے ہوئے کمپیوٹر ہارڈویئر کے راستے میں جو بڑی رکاوٹیں موجود ہیں۔ ان میں سے ایک برقی طاقت کا خرچ بھی ہے۔
اس وقت ہارڈویئر اور خاص طور پر مائیکرو پروسیسر مختصر ہوکر چھوٹے اور آسانی سے ایک جگہ سے دوسری جگہ لے جانے والے آلات کا حصہ بن رہا ہے۔
لیپ ٹاپ کمپیوٹر کا استعمال روزبروز بڑھ رہا ہے۔ وائرلیس انٹرنیٹ آلات دنیا پر چھانے شروع ہوگئے ہیں۔ کئی طبی آلات میں مائیکرو پروسیسر استعمال ہورہا ہے۔ ان تمام آلات کی سب سے بڑی خامی یہ ہے کہ انہیں برقی طاقت کی بڑی مقدار درکار ہوتی ہے اور چھوٹے چھوٹے وقفوں کے بعد بیٹری چارج کرنی پڑتی ہے۔
غیر قانونی مائننگ کے بارے میں جانئے
سائنس دانوں کی ایک طویل عرصے سے یہ کوشش ہے کہ وہ بیٹری کو مزید برقی طاقت، لمبے عرصے تک محفوظ کرنے کے قابل بنا دیں لیکن ان کو اس ضمن میں کوئی خاص کام یابی حاصل نہیں ہوئی ہے۔
اس محاذ میں ناکامی کو دیکھتے ہوئے انہوں نے فیصلہ کیا ہے کہ مسئلہ کا دوسرا حل تلاش کیا جائے۔ یعنی ایسے سرکٹ ڈیزائن کیے جائیں جنہیں کم برقی طاقت کی ضرورت ہو۔ اس طرح کمپیوٹر میں استعمال ہونے والی بیٹری خودبخود زیادہ عرصے تک چلے گی۔

ریسرچ

پوردو یونیورسٹی (Purdue University) میں الیکٹریکل اینڈ کمپیوٹر انجینئرنگ کے اسسٹنٹ پروفیسر ٹی این وجے کمارنے ایک کم برقی طاقت استعمال کرنے والا سرکٹ تیار کیا ہے۔
یہ سرکٹ ICALP یعنی Integerated Circuit Architecture Approach to Low Power نامی پراجیکٹ کے تحت تیار کیا گیا ہے۔ عام مائیکرو پروسیسر کی یادداشت کو ہر وقت مکمل برقی طاقت فراہم کی جاتی ہے، چاہے وہ اسے استعمال کررہا ہو یا نہیں۔ ہوسکتا ہے کہ صرف 10 فیصد یادداشت استعمال ہورہی ہو لیکن برقی طاقت 100 فیصد ہی خرچ ہورہی ہو۔

یہ نیا سرکٹ ہر سیکنڈ کے سوویں حصے میں یہ دیکھے گا کہ کمپیوٹر کے یادداشت (memory) کے کتنے حصے استعمال نہیں ہورہے ہیں اور انہیں برقی طاقت فراہم کرنا بند کردے گا۔ لیکن اگر یہ مزید یادداشت (memory) کی ضرورت محسوس کرے گا تو کچھ حصوں کو برقی طاقت فراہم کردے گا۔ اس کے علاوہ یہ نیا ڈیزائن یادداشت سے برقی طاقت کے ضیاع (Leakage) کو بھی کم کردیتا ہے۔

برقی طاقت کا خرچ 62 فیصد کم

کمپیوٹر سمولیشن سے پتا چلا ہے کہ یہ نیا سرکٹ مائیکروپروسیسر کی کیشے یادداشت(Cache Memory) کی برقی طاقت کے خرچ کو 62 فیصد کم کرتا ہے جبکہ اس عمل میںاس کی صلاحیت میں صرف 4 فیصد کمی آتی ہے۔
یہ سرکٹ مستقبل میں لیپ ٹاپ کمپیوٹرز اور وائرلیس فونز کے علاوہ متوازی پروسیسرز میں بھی استعمال ہوسکے گا جنہیں برقی طاقت کی زبردست مقدار درکار ہوتی ہے۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں