کے پی فوڈ اتھارٹی نے پشاور ہسپتال کینٹینوں متعلق رپورٹ جاری کردی

کے پی فوڈ اتھارٹی نے پشاور ہسپتال کینٹینوں متعلق رپورٹ جاری کردی

پشاور(رپورٹ: نواب شیر)خیبرپختونخوا فوڈ سیفٹی اینڈ حلال فوڈ نے پچھلے چار ماہ کے دوران پشاور کے سرکاری و نجی ہسپتال کینٹینوں کی گئی چیکنگ کے بنیاد پر جائزہ رپورٹ جاری کردی ہے۔رپورٹ کے مطابق پانچ سے زیادہ نجی ہسپتالوں کی کینٹینوں میں اسی فیصد سے زائد بہتری دیکھنے میں آئی ہے۔ نجی ہسپتال کینٹینوں کو جرمانہ بھی کیا گیا لیکن کچھ کینٹینوں نے وارننگ نوٹسز پر بھی بہتری دکھائی ہے۔تفصیلات کے مطابق پشاور خیبرتدریسی ہسپتال میں دو جنرل سٹورز اور تین کینٹینوں کو اسی ہزار جرمانہ کیا گیا جبکہ ایک کینٹین کو دو دفعہ سیل کیا گیا۔ اسی طرح ایک ایک دفعہ ان کو ایمپرومنٹ اور وارننگ نوٹسز بھی جاری کئے گئے ہیں لیکن اس کے بدلے میں ابھی تک صرف چالیس فیصد تک کی بہتری دیکھنے میں آئی ہے جو کہ بہت کم ہے۔ حیات آباد میڈیکل کمپلیکس کے تینوں کینٹینوں کو ایک ایک دفعہ سیل کیا گیا ہے جبکہ جرمانوں کی مد میں تیس ہزار سے زائد روپے بھی جمع کراچکے ہیں اور ایک ایک دفعہ ایمپرومنٹ اور وارننگ نوٹسز بھی وصول کرچکے ہیں لیکن بہتری صرف تیس فیصد دیکھنے میں آئی ہے جو کہ غیرتسلی بخش ہے۔ صوبہ کے سب سے بڑے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں میں چار بڑے کینٹین ہیں جو کہ ایک دفعہ سیل کئے گئے ہیں اور دو دفعہ ان کو وارننگ اور ایمپرومنٹ نوٹسز بھی مہیا کئے جاچکے ہیں۔ حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی کی مد میں تاحال اسی ہزار روپے جرمانے بھی وصول کئے جاچکے ہین لیکن بہتری صرف چالیس فیصد لائی گئی ہے جو کہ معیار کے مطابق نہیں۔دوسری جانب پانچ سے زائد نجی ہسپتالوں میں واقع کینٹینوں کو حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی پر تین لاکھ سے زائد جرمانہ ادا کرنا پڑا ہے جبکہ دو تین کینٹینوں نے تو وارننگ اور ایمپرومنٹ نوٹسز پر اسی فیصد سے بہتری لائی ہے جو کہ تسلی بخش اور خوش آئند بات ہے۔ نجی ہسپتال کینٹینوں میں نارتھ ویسٹ جنرل اور آر ایم آئی کے کینٹینوں کی صفائی اور معیار کو قابل تعریف قرار دیا گیا ہے جبکہ سرکاری ہسپتالوں کے کینٹینوں میں ابھی بھی صفائی اور خوراک کا معیار غیرتسلی بخش ہے جو کہ افسوسناک ہے۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں