متحدہ مجلس عمل کا مقابلہ کس سےہے،سینیٹرسراج الحق کانوشہرہ میں انتخابی جلسوں واضح اعلان

متحدہ مجلس عمل کا مقابلہ کس سےہے،سینیٹرسراج الحق کانوشہرہ میں انتخابی جلسوں واضح اعلان

Sirajulhaq,People,Asif Luqman Qazi
Sirajulhaq A Khitab in Nowshera

نوشہرہ(تفہیم ڈاٹ پی کےآن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ متحدہ مجلس عمل کا مقابلہ عالمی اسٹیبلشمنٹ کے آلہ کاروں سے ہے ۔ ہم عوامی طاقت سے ان مہروں کو نشان عبرت بنائیں گے ۔ کرپٹ عناصر موسمی پرندوں کی طرح پارٹیاں بدل رہے ہیں مگر وہ احتساب سے نہیں بچ سکیں گے ۔ ایم ایم اے ان کا بے لاگ اور بے رحمانہ احتساب کرے گی اور لٹیروں سے لوٹی ہوئی دولت کی پائی پائی وصول کر کے اسے عوام کی فلا ح و بہبود پر خرچ کریں گے ۔ حکمرانوں کی لوٹ مار اور کرپشن کی وجہ سے ملکی معیشت بدحالی کاشکار ہے ۔ سابقہ حکومتوں نے اپنے منشور پر عمل کیا نہ عوام سے کیے گئے وعدے پورے کیے ۔ پاکستان اسلام کے نام پربنا مگر ستر سال میں اسلامی نظام نافذ ہوا نہ فیصلے قرآن و سنت کے مطابق ہوئے ۔ متحدہ مجلس عمل کے منشور کا پہلا نقطہ ملک میں نظام مصطفی کا نفاذ ہے ۔ قوم متحدہ مجلس عمل پر اعتماد کرے اور ایم ایم اے کی کرپشن فری ٹیم کو کامیاب کرائے ۔ان خیالات کااظہار انہوںنے اضا خیل پارک نوشہرہ اور خیشگی میں متحدہ مجلس عمل کے انتخابی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسوں سے متحدہ مجلس عمل کے امیدواروں آصف لقمان قاضی ، پیر ذوالفقار بادشاہ اور متحدہ مجلس عمل کے دیگر رہنماﺅں نے بھی خطاب کیا ۔ جلسوں میں علاقہ کے عوام نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ قومی دولت لوٹنے والا کوئی کرپٹ اگریہ سمجھتاہے کہ وہ پارٹی بدل کر احتساب سے بچ جائے گا اور اس سے لوٹی گئی قومی دولت کا حساب نہیں لیا جائے گا تو وہ خبردار رہے کہ اسے بھاگنے اور چھپنے کا موقع نہیں ملے گا ۔متحدہ مجلس عمل کسی لٹیرے کو بھاگنے کاموقع نہیں دے گی اور ایسے فراڈیوں کا کڑا احتساب کریں گے جو ہر الیکشن میں مختلف پارٹیاں بد ل کر کامیاب ہو جاتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ ہم ملک کو قرضوں کی لعنت سے پاک کر کے سود کا خاتمہ کریں گے اور زکوة کا پاکیزہ نظام رائج کریں گے۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل کلین ، شفاف اورباکردار لوگوں کا اتحاد ہے ، ہم نے دیندار اور کرپشن سے پاک ٹیم قوم کے سامنے پیش کی ہے ۔ متحدہ مجلس عمل کی سابقہ صوبائی حکومت کے دور میں بھی خیبر پختونخوا نے ریکارڈ ترقی کی تھی ، ہم نے خواتین یونیورسٹی قائم کی ، طالبعلموں کو مفت کتابیں اور ہسپتالوں میں ایمر جنسی علاج مفت کیا ۔ ایم ایم اے کی صوبائی حکومت ایک کرپشن فری ماڈل حکومت تھی جس کا اعتراف بین الاقوامی اداروں نے بھی کیا ۔ اگر ہمیں موقع ملا تو مرکز میں بھی ایک صاف ستھری اور کرپشن سے پاک حکومت قائم کریں گے جو عوام کی خوشحالی اور ترقی کا ذریعہ بنے گی ۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان کوایک ماڈل اسلامی ویلفیئر اسٹیٹ صرف متحدہ مجلس عمل بناسکتی ہے۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ اس وقت بے روزگار ی ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہے ۔ نوجوان مایوس اور ڈگری ہولڈرز بے روزگار ہیں ، لوڈشیڈنگ کی وجہ سے تمام کاروبار زندگی مفلوج ہوچکاہے ۔ فیکٹریاں اور کارخانے بند ہیںاور بے روزگار ی کی وجہ سے لوگ فاقہ کشی پر مجبور ہوچکے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ ہر سال تین لاکھ نوجوان یونیورسٹیوں سے فارغ ہوتے ہیں مگر حکومت پچاس ہزار کے لیے بھی ملازمتیں پیدا نہیں کرسکتی ۔ انہوںنے کہاکہ لاکھوں نوجوان تعلیم حاصل کرنے کے بعد اپنے والدین پر بوجھ بنے ہوئے ہیں ۔ متحدہ مجلس عمل بے روزگار نوجوانوں کو باعزت روزگار دے گی اور جب تک نوجوانوں کو روزگار نہیں ملے گا ، انہیں بے روزگاری الاﺅنس دیا جائے گا ۔ انہوںنے کہاکہ دو کروڑ سے زیادہ بچے سکولوں سے باہر ہیں ۔ متحدہ مجلس عمل ان بچوں کے ہاتھ میں قلم او رکتاب دے گی ۔ انہوںنے کہاکہ متحدہ مجلس عمل کے پاس ملک کو ایک ترقی یافتہ کرپشن فری اور قرضوں سے پاک پاکستان کی تعمیر کا واضح ایجنڈا ہے ۔ قوم ہم پر اعتماد کرے اور کرپٹ اور بددیانت لوگوں سے نجات کے لیے ہمارا ساتھ دے ۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں