الیکشن2018 سے پہلے پہلےمیری یہ تحریر غورسے پڑھ کر اپنی رائے ضرور دیں۔۔

Election 2018
Election 2018

#الیکشن_2018 سے پہلے پہلےمیری یہ تحریر غورسے پڑھ کر اپنی رائے ضرور دیں۔۔

ایک دن مُلا نصیرالدین اپنے گدھے کو گھر کی چھت پر لے گئے جب نیچے اتارنے لگے تو گدھا نیچے اتر ہی نہیں رہاتھا
بہت کوشش کئیے مگر گدھا نیچے اترنے کا نام ہی نہیں لے رہا تھا آخر کار ملا تھک کر خود نیچے آ گئے اور انتظار کرنے لگے کہ گدھا خود کسی طرح سے نیچے آجاۓ.
کچھ دیر گزرنے کے بعد ملا نے محسوس کیا کہ گدھا چھت کو لاتوں سے توڑنے کی کوشش کر رہا ہے.
ملا پریشان ہو گئے کہ چھت تو بہت نازک ہے اتنی مضبوط نہیں کہ اس کی لاتوں کو سہہ سکے دوبارہ اوپر بھاگ کر گئے اور گدھے کو نیچے لانے کی کوشش کی لیکن گدھا اپنی ضد پر اٹکا ہوا تھا اور چھت کو توڑنے میں لگا ہوا تھا ملا آخری کوشش کرتے ہوۓ اسے دوبارہ دھکا دے کر سیڑھیوں کی طرف لانے لگے کہ گدھے نے ملا کو لات ماری اور ملا نیچے گر گئے اور پھر چھت کو توڑنے لگا بالآخر چھت ٹوٹ گئی اور گدھا چھت سمیت زمین پر آ گرا.
ملا کافی دیر تک اس واقعہ پر غور کرتے رہے اور پھر خود سے کہا کہ کبھی بھی گدھے کو مقام بالا پر نہیں لے جانا چاہئیے ایک تو وہ خود کا نقصان کرتا ہے دوسرا خود اس مقام کو بھی خراب کرتا ہے اور تیسرا اوپر لے جانے والے کو
بھی نقصان پہنچاتا ہے.
ہم لوگ نااہل گدھوں کو مقام بلند پر بٹھاتے ہیں اور انہیں بڑے بڑے القابات دیتے ہیں پھر یہ گدھے ہم کو ہی نیچے پھینک دیتے ہیں اور اس منصب کو بھی خراب کرتے ہیں..!
نتیجہ:::::::::::
ہر ایک اپنے اردگرد افراد پر نظر ڈال کر نتیجہ اخذ کرے…اور ان میں سے ہر لیڈر پر غور کریں کہ کون صرف باتیں اور دعوے کرنے والا ہے اور کون کام کرنے والا۔۔۔۔
دوستوں ووٹ شخصیت کو دو۔ نا کے مداریوں کو جو صرف ووٹ کے دنوں میں ہمارے غم اور شادی میں شریک ہوکر ہم سے ووٹ لے کر پھر ہمارا نام تک یاد نہیں رکھتا اور نا ہم سے بات کرتے ہیں۔
دوستوں ووٹ ایک طاقت ہے جو آپ ان مداریوں اور جھوٹے لوگوں کو دیتےہیں اور پھر یہی طاقت یہ لوگ آپ پر ہی استعمال کرتے ہیں۔
ویسے کیا عجیب اتفاق ہے ووٹر اپنے لیے ایک ساٸیکل بھی نہیں خریدسکتا اور ووٹ لینے والا بنگلوں اور گاڑیوں میں۔۔واہ۔۔۔
ہم کتنے بے وقوف لوگ ہے کہ سب کچھ جانتے ہوۓ بھی ان کمینوں کےلیے زندہ باد اور مردہ باد کے نعرے لگاتے ہیں۔ یہ لوگ تو ہمیں اپنے گاڑیوں میں بھی نہیں بیٹھنے دیتے لیکن پھر بھی ہم ان کے لیے بڑے عزت اور احترام سے انہی کے گاڑی کا گیٹ کھلوادیتے ہیں تاکہ ہمارے لیڈر کو تکلیف نہ پہنچے۔ افسوس ہمارے اس حال پر۔
ووٹ ہم پر آنے والے نسلوں کا حق ہے تاکہ ہم آنے والے نسلوں کے لیے کچھ بہتر سوچیں۔ اور بہتر لیڈر کا انتخاب کریں۔ ووٹ دیتے وقت ذاتی مفاد کو سامنے نہ رکھے بلکہ اجتماعی کام پر زیادہ توجہ دینے والوں کو ووٹ دیں۔
” ووٹ کے بارے میں ہم سے پوچھا جاۓ گا“
شعور رکھنے والے لوگ ان شاءاللہ بات کو آسانی سے سمجھینگے

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں