وزیر اعلی کے آبائی حلقے میں، بیماری کے ہاتوں مجبور شخص نے خود کشی کرنے کی کوشش

نوشہرہ (رپورٹ فضل نبی)گردان کاٹ اس شخص کا نام دین محمد ہے اور نوشہرہ کے علاقے پشتون گڑھی کے رہائشی ہے دین محمد کو کسی نے ذبح نہیں کیا بلکہ اس نے خود تیز دار بلیڈ سے اپنے اپ کو ذبح کر نے کی کوشش کی انکی ادھا شہ رگ کاٹ چکا ہے ۔اس نے کیوں اپنے اپ کو ذبح کرنے کی کوشش کی ذبح کرنا ایک تکلیف دیے موت ہوتا ہے اور مزید تکلیف دہ اس وقت ہوجاتا جب ایک شخص صرف اس امر پر اپنے اپ کو ذبح کررہا ہے کہ ایک طرف وہ پیسے نہ ہونے پراپنی بیماری کا علاج نہیں کرسکتا ہے اور دوسری جانب وہ لاچاری میں چارپائی پر پڑے انکے گھر میں موجودہ بیوی ،جوان سال دیوانہ بیٹا اور 4بییٹاں دودنوں سے بھوکے انکے گرد جمع ہوکر ان سے یہ فریاد کرتے ہوئے کہ بابا دودنوں سے ہم نے ایک روکھی سوگی روٹی نہیں کھائی اور بھوک کی وجہ سے انکے دوبیٹوں پر غشی کے دورے پڑ جاتے ہے اورجوان سال دیوانہ بیٹا ماں سے روتے ہوئے صر ف روٹی کا ضد کرتے ہوئے۔ اور ساتھ ایک بیٹی یہ ایک فریادی احتجاج کرتی ہوئی کہ بابا پڑوس نے اج قرض اٹا دینے سے انکار کیا ۔ سامنے والے تو اب نہ خیرات ، نہ صداقہ کے نام روٹی دینے کا بھی سلسلہ کئی دنوں سے بند کردیا ہے تو اسے حالت میں دین محمد خود کشی نہ کرتے تواور کیا کرتے اور خود کشی کے لیے انکے پاس نہ پستول تھی نہ زہر نہ ہی پیڑول کیونکہ یہ سب تو پیسوں سے مل جاتی اور دین محمد کے پاس یہ سہولیات نہ تھی اور اسے خالت میں دین محمد نے گھر میں شیو کے ایک پرانے بلیڈ پر اپنی شہ رگ کو کاٹنے کی کوشش کی ۔دین محمد کا تعلق ہمارے دلٕ عزیز وزیراعلی پرویز خان حلقے سے ہے انکی بدولت اس گاوں میں کئی سو لوگوں کو وظن کارڈ صحت کارڈز مل چکے ہیں مگر دین محمد اس سہولت سے ،محروم چلے اتے رہے اور انکو کچھ عرصہ قبل اپنڈیکس کا تکلیف پیدا ہوگئی تو ہسپتالوں کا چکر لگاتے توکسی بھی جگہ پیسوں کے بعیر اپریشن نہ ہونے پر دین محمدنے اپنا کل اثاثہ گائے کو فروحت کرکے ان کے پیسوں سے اپریشن کیا ۔ مگر اپریشن کے بعد مذید بیماریوں نے انکو گھیر لیا اور محنت مزدوری سے رہ گیا ۔ اب دین محمد پشاور کے ایل ار ایچ ہسپتال میں انتہائی نگہداشت وارڈمیں زندگی اور موت کے کشمکش میں پڑے ہے اور گھرمیں موجود انکے خاندان بھوک سے ناکام جنگ لڑرہا ہیں۔ دین محمد کی گردان کاٹ نہ تصویر ہمارے بے حس معاشرے پر ایک تھپٹر ہے اگر کوئی صاحب حیثیت انکی مدد کرنا چاہتے ہے تو اس نمبر 03005926267۔ پر رابط کریں

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں