’’قیمت صرف 5 لاکھ روپے ‘‘ سستی ترین فرانسیسی گاڑیاں پاکستان میں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)فرانس کی معروف کار ساز کمپنی رینولٹ کا پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کا فیصلہ،حکام سےبات چیت شروع کر دی ۔ ذرائع نے بتایا کہ رینولٹ سرمایہ کاری کے لیے سعودی الفتیم گروپ کے ساتھ بات چیت کر رہی ہے۔ سعودی الفتیم گروپ پاکستان کے آٹو سیکٹر میں ایک بس ساز ادارے میں سرمایہ کاری کے ذریعے موجود ہے۔ذرائع کے مطابق رینولٹ کمپنی پاکستان میں سرمایہ کاری میں سنجیدہ ہے اور اس سلسلے میں کراچی کے بن قاسم انڈسٹریل پارک میں 50 ایکڑ زمین بھی خرید لی ہے۔
اس سے قبل رینولٹ کمپنی گندھارا گروپ سے مل کر کار سازی کے شعبے میں سرمایہ کاری کرنا چاہ رہی تھی لیکن ان کی بات چیت کامیاب نہ ہو سکی۔اطلاعات کے مطابق گندھارا کمپنی نے کسی دوسری کمپنی سے اشتراک کے بجائے نسان ڈاٹسن گو کی پیداوار میں دلچسپی رکھتی ہے اور اس کے لئے کمپنی نے حکومت کو آگاہ بھی کر دیا گیا ہے۔واضح رہے کہ رینالٹ ہمسایہ ملک بھارت میں بھی اپنی پروڈکشن اور گاڑیوں کی مارکیٹ کو کامیابی سے چلا رہی ہے اور اس کی سب سے قیمت لگژری گاڑی 5 لاکھ روپے پاکستانی کے لگ بھگ ہے۔دریں اثنا معلوم ہوا ہے کہ آٹھ سال کے تعطل کے بعد گندھارا نسان لمیٹڈ پاکستان میں اپنے آپریشنز کو دوبارہ شروع کرنے والی ہے اور اس کا آغاز ایک سستی بجٹ گاڑی ڈسٹن گو کو متعارف کراکے کیا جاسکتا ہے۔ایک معاہدے کے تحت نسان کو قانونی طور پر کم لاگت میں گاڑیوں کے پارٹس درآمد کرنے کی اجازت ہوگی تاکہ کمپنی بجٹ دوست گاڑیاں تیار کرسکے جبکہ کمپنی کی جانب سے 200 ملین ڈالرز کی سرمایہ کاری کی جائے گی جس سے 2010 سے اس کمپنی کے پاکستان میں بند پلانٹ دوبارہ کام کرنے لگیں گے۔1200 سی سی 1.2 لیٹر انجن کے ساتھ اس گاڑی میں یو ایس کنکٹیویٹی، ٹیوب لیس ٹائر، پانچ دروازے، خوبصورت ڈیزائن، تھری ڈی شیپ ہیڈ لائٹس، فرنٹ ڈرائیور ائیربیگ اور دیگر فیچرز نمایاں ہیں۔
اس گاڑی کی پاکستان میں متوقع قیمت 5 لاکھ 60 ہزار روپے ہوسکتی ہے کیونکہ دنیا بھر میں یہ اسی قیمت پر فروخت کی جارہی ہے۔ ویسے یہ قیمت حتمی تو نہیں مگر امکان اسی بات کا ہے کہ پاکستان میں دیگر کمپنیوں کو سخت ٹکر دینے کے لیے گندھارا نسان اسی قیمت پر گاڑی متعارف کرا سکتی ہے تاکہ صارفین کی توجہ اپنی جانب مبذول کرائی جا سکے۔پاکستانی یہ خبر سن کر بہت پرجوش ہیں ۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں