جنگ کا خطرہ۔۔۔ وہ ملک جس کے لئے چین نے تمام پروازیں بند کردیں، انتہائی تشویشناک خبر آگئی

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)شام پر حملے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ شمالی کوریا پر بھی حملے کا فیصلہ کر چکے ہیں اور تجزیہ کاروں کے مطابق امریکہ کسی بھی وقت یہ حملہ کر سکتا ہے۔ صورتحال کی سنگینی کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ چینی فضائی کمپنی ایئرچائنہ نے سر پر منڈلانے والی جنگ کے خطرے کے پیش نظر شمالی کوریا کے لیے اپنی پروازیں منسوخ کر دی ہیں۔برطانوی اخبار دی میٹرو کے مطابق کمپنی کی پیانگ یانگ کے لیے آخری فلائٹ جمعہ کو گئی۔ اس کے بعد سے کوئی پرواز شمالی کوریا نہیں گئی۔اس سے قبل چین ڈیڑھ لاکھ فوجی، جدید ترین ٹینک و دیگر جنگی سامان شمالی کوریا کے بارڈر پر پہنچا چکا ہے۔

رپورٹ کے مطابق شمالی کوریا اپنے سپریم لیڈر کم سنگ کے لیے جشن کی تیاریاں کر رہی ہے حالانکہ وہ 1994ءمیں انتقال کر چکے ہیں۔ کئی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا اس جشن پر نیا ایٹمی تجربہ کر سکتا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اگر ایسا ہوتا ہے تو امریکہ یقینی طور پر اس پر حملہ کر دے گا کیونکہ صدر ڈونلڈٹرمپ اس معاملے پر غور کر رہے ہیں۔ چین کی طرف سے شمالی کورین ایٹمی پروگرام کی کئی بار مذمت کی جا چکی ہے تاہم دونوں ممالک کی سیاسی و جغرافیائی قرابت داری کے باعث تجزیہ کار اس شبے کا اظہار کر رہے ہیں کہ چین کو اس ایٹمی تجربے کی پیشگی وارننگ موصول ہو چکی ہے جس کی وجہ سے وہ یہ سب اقدامات کر رہا ہے۔کورین خطہ ڈونلڈٹرمپ کے اقتدار میں آنے کے بعد سے الرٹ پر ہے کیونکہ وہ شمالی کوریا کو سبق سکھانے کے عزم کا بارہا اعادہ کر چکے ہیں۔ حتیٰ کہ وہ کہہ چکے ہیں کہ اگر چین شمالی کوریا کو ایٹمی پروگرام روکنے پر آمادہ نہیں کرتا تو امریکہ اکیلے ہی اس کے خلاف کارروائی کرگزرے گا۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں