پی ٹی آئی کے خواتین ونگ کی اراکین کے درمیان جھگڑے کا انکشاف، عمران خان نے ناقابل یقین قدم اٹھا لیا

لاہور(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف شعبہ خواتین ونگ میں اختلافات شدت اختیار کرنے لگے جس کی وجہ سے پارٹی چیئرمین نے خواتین ونگ کو دوبارہ بحال کرنے کی بجائے اس کے حال پر چھوڑ دیا۔پی ٹی آئی کی مرکزی تنظیموں میں جس طرح گروپ بندیوں کی سر پرستی پارٹی کی اعلیٰ لیڈر شپ کررہی ہے ۔ اسی طرح خواتین ونگ کے دونوں اہم گروپوں کو بھی پارٹی کی اعلیٰ لیڈر شپ کی اندرون خانہ حمایت حاصل ہے ۔اس سلسلے میں پی ٹی آئی کی خواتین کے ذرائع کا کہنا ہے سیدہ سلونی بخاری ان دنوں شدید علیل ہیں، ان کے گروپ کو ایم پی اے سعدیہ سہیل رانا لیکر چل رہی ہیں جن کے ساتھ ڈاکٹر زرقا تیمور سہروردی‘ روبینہ جمیل اور ڈاکٹر سیما انوار سمیت دیگر خواتین شامل ہیں ۔ اس گروپ کو سابقہ مرکزی صدرفوزیہ قصوری کی حمایت حاصل ہے جبکہ پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل جہانگیر خان ترین اور عبدالعلیم خان بھی ان کو سپورٹ کرتے ہیں ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ خواتین کے ودسرے دھڑے کی قیادت ایم پی اے نوشین حامد معراج کرتی ہیں ان کے ساتھ مسز جمشید چیمہ اورنیلم حیات سمیت دیگر شامل ہیں جبکہ مرکزی خواتین میں سے ایم این اے منزہ حسن ان کی حمایت کرتی ہیں جبکہ شاہ محمود قریشی بھی انہیں سپورٹ کرتے ہیں ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ان پارٹی خواتین کی گروپ بندی کی و جہ سے خواتین ونگ غیر فعال ہو چکا ہے اور عمران خان نے بھی اس کا کوئی نوٹس نہیں لیا اور اس ونگ کو دوبارہ بحال نہیں کیا ۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں